Progress made on Pakistan-Russia stream gas pipeline project

Like this? Please Spread The Word By Sharing.


اسلام آباد: ذرائع کے حوالے سے اے آر وائی نیوز نے اتوار کو رپورٹ کیا کہ پاکستان اور روس کے درمیان سٹریم گیس پائپ لائن منصوبے پر پیش رفت ہوئی ہے کیونکہ متعلقہ معاہدوں اور دستاویزات پر دستخط کرنے کی تاریخوں کو حتمی شکل دے دی گئی ہے۔

سفارتی ذرائع نے اے آر وائی نیوز کو بتایا کہ روس نے پاکستان میں سٹریم گیس پائپ لائن کی تعمیر سے متعلق اہم معاملات پر روشنی ڈالی۔ سٹریم گیس پائپ لائن منصوبے کے لیے متعلقہ دستاویزات اور معاہدوں پر دستخط کی تاریخوں کو حتمی شکل دے دی گئی ہے۔ منصوبے کا تعمیراتی کام 2022 میں شروع کیا جائے گا۔

معلوم ہوا کہ پاکستان اور روس نے شیئر ہولڈرز کے معاہدے پر پیش رفت کے لیے مذاکراتی مسودے پر اتفاق کیا ہے۔ پائپ لائن کی تعمیر کے لیے باضابطہ طور پر کمپنی قائم کرنے کے معاہدے پر 31 جنوری 2022 کو دستخط کیے جائیں گے۔

قانونی دستاویزات پر دستخط ایک خصوصی مقصد کی کمپنی کے قیام کی راہ ہموار کریں گے۔ ذرائع نے بتایا کہ اسلام آباد اور ماسکو سٹریم گیس پائپ لائن منصوبے کے شیئر ہولڈرز کے معاہدے پر 15 فروری کو دستخط کریں گے۔

پڑھیں: پاکستان اور روس نے نارتھ ساؤتھ گیس پائپ لائن منصوبے کے لیے آئی جی اے پر دستخط کیے

علاوہ ازیں پاکستان اور روس نے اسٹریم گیس پائپ لائن کی تعمیر کے لیے سہولیات کی فراہمی کے حوالے سے بھی معاہدہ کیا ہے۔ سہولیات کے حوالے سے متعلقہ معاہدے پر بھی 15 فروری کو دستخط کیے جائیں گے۔

اس منصوبے کا مقصد 2.5 بلین ڈالر سے 3 بلین ڈالر کی لاگت سے 1,100 کلومیٹر طویل سٹریم گیس پائپ لائن تعمیر کرنا ہے جس سے 12.6 بلین کیوبک میٹر گیس کی فراہمی ممکن ہو سکے گی۔

جولائی میں پاکستان اور روس کے درمیان 1100 کلومیٹر طویل ایک معاہدے پر دستخط ہوئے تھے۔ سٹریم گیس پائپ لائن کراچی سے لاہور تک جو 2023 تک مکمل ہو جائے گا۔

پاکستان سٹریم گیس پائپ لائن منصوبے کے معاہدے پر سیکرٹری پٹرولیم ارشد محمود اور روسی وزارت توانائی کے ڈائریکٹر نے ایک تقریب میں دستخط کئے۔ تقریب میں وزیر توانائی حماد اظہر اور روسی وزارت توانائی کے نمائندوں نے بھی شرکت کی۔

حماد اظہر نے کہا تھا کہ گیس پائپ لائن منصوبہ 2015 سے تاخیر کا شکار تھا اور دونوں ممالک نے تکنیکی تعاون کے معاہدے پر دستخط کیے ہیں۔ یہ منصوبہ 2.5 بلین ڈالر کی لاگت سے 2023 تک مکمل ہوگا۔

انہوں نے کہا تھا کہ نارتھ ساؤتھ سٹریم گیس پائپ لائن منصوبہ ایک اہم منصوبہ ہے جبکہ گیس پائپ لائن بچھانے کا کام مقامی کمپنیاں مکمل کریں گی اور مواد روس سے منگوایا جائے گا۔

اظہر نے کہا تھا کہ آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی (اوگرا) گیس پائپ لائن کے ٹیرف کو حتمی شکل دے گی جو ملک کے شمالی حصے سے جنوبی حصے تک گیس کی سپلائی کے لیے استعمال کی جائے گی۔

وزیر توانائی نے کہا تھا کہ تازہ ترین معاہدے کے ذریعے اقتصادی اور توانائی کے شعبوں میں تعاون بڑھایا جائے گا۔

روسی وفد کے سربراہ الیگزینڈر ٹولپاروف نے کہا تھا کہ گیس پائپ لائن منصوبہ توانائی کے تحفظ کے حوالے سے پاکستان کے لیے سنگ میل ثابت ہو گا۔

فیس بک نوٹس برائے یورپی یونین!
FB تبصرے دیکھنے اور پوسٹ کرنے کے لیے آپ کو لاگ ان کرنا ہوگا!

.

Like this? Please Spread The Word By Sharing.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com
Live Updates COVID-19 CASES